Jump to content
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!) ×
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!)
In the Name of God بسم الله
sharib

میں اپنوں پر ستم ڈھانے لگا ہوں

Recommended Posts

غزل

(سید اقبال رضوی شارب )

نئی قدروں پہ اترانے لگا ہوں
اثاثِ کہنہ دفنانے لگا ہوں

جدر سے سر کو ٹکرانے لگا ہوں
محبت کا ثمر پانے لگا ہوں

کہاں کا زہد کیسی پارسائی
گناہوں میں سکوں پانے لگا ہوں

رواداری کہیں گم ہو گئی ہے
میں اپنوں پر ستم ڈھانے لگا ہوں

مرے اسلام میں الحاد جائز
اذاں مندر سے دلوانے لگا ہوں

کچھ اس رفتار سے بگڑا زمانہ
میں" آئندہ" سے گھبرانے لگا ہوں

یہ سچ وچ کیا ہے دیوانے کی بڑ ہے
میں اب جھوٹی قسم کھانے لگا ہوں

کوئی منظر نہیں رکھتا کشش اب
ہر اک منظر سے اکتانے لگا ہوں

یہ کیسے موڑ پر چھوڑا ہے اس نے
کہ اب خود پر ترس کھانے لگا ہوں


ہے انساں کون سی پستی میں شارب
یہ اشعاروں میں بتلانے لگا ہوں

Edited by sharib

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You are posting as a guest. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.


×
×
  • Create New...