Jump to content
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!) ×
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!)
In the Name of God بسم الله

talib e ilm

Advanced Member
  • Posts

    325
  • Joined

  • Last visited

Reputation Activity

  1. Like
    talib e ilm reacted to h1229m in Why Do Shias Hate Israel/jews So Much?   
    We hate zionism and Us Goverment ! Only , Not All jews and American people !
  2. Like
    talib e ilm reacted to maes in Why Do Shias Hate Israel/jews So Much?   
    you will find that the most people in enmity to the believers are the jews and idolaters, and that the nearest in affection to the believers are those who say: 'we are nazarenes (Christian). ' that is because amongst them there are priests and monks; and because they are not proud.(ًQuran 5:82)
      
    Sunnies and Wahhabies are Muslims our brothers, but for sure Wahhabies who want to kill us we have a right to defend us even if they are our brothers !
    Moreover many of those radical Shia and Sunni groups are supported by Zhionists.
    It is wise that we target the main and the head enemy, not just it;s hands.
  3. Like
    talib e ilm reacted to Muhammed Ali in More Guests, Less Members   
    Think about bringing in some special guests to contribute to the forum like you used to in the past.
  4. Like
    talib e ilm reacted to bitto in Yadgaar E Shahadat Pisran E Muslim A.s   
    Assalaam alaikum
    Pisran e Janaab Muslim alaihis salaam ka yeh pur soz Shahadat ka din hum logon ki rooh ko jhanjhod deta hai.Beshak insaniyat se hat ke baten ho to kahil se kahil nafs bhi jag jatee he.Albata yeh koi mamooli baat na thi ke khandan e naboowat par koi aankh uthaye aur zamana chup rah jaye.Yeh Khuda ne bhi nahi chaha aur isi liye Ayat e muwaddat mein Muhabbat ke takazey ko mazboot kiya.
    Muwaddat ke takazay ko pura karna sirf majlis attend karna nahi he,balki woh amal bhi karen jo in shahadaton ko denay walon ne chaha aur inke Khuda ne bhi.Beshak majlisen attend karna ibadat he to kyun na ham ise ibadat ki tarha he karen.Jaise namaz gair momin libaas me nahi hoti aisi hi sochen ki majlis me bhi Islami libaas pehan kar jayein aur yeh sog ke rang ka ho.Gurbat humain gunahgaar na banaye,yeh kai duaon me hai.To phir chahe waqt ki gurbat ho ya paise ki,humain chahiye ki hum har hal me deen par sabit kadam rahen.jaisa ke Pisran e muslim ne musibat ke waqt me bhi ibadat ko na bhulaya.
    Yeh do kumsin bachche ek aath baras ka to dusra das baras kay they.Ek Muhammad aur ek Ibrahim,donon ne waqt e musibat namaz ko na bhulaya,Haris altamash se namaz ke mohlat le aur apne katl hone se pehle namaz ada ki aur ek dusrey par jaan nyuchawar karna chahte thay.Dono ne apney galey rahe sadaqat aur shahadat me pesh kiye aur siraat al mustaqeem pe chaltey Jannat al Firdaus ke manzil ko tay karte hue alam e barzakh main apne buzurgon se ja miley.
  5. Like
    talib e ilm reacted to repenter-gone4awhile in Unity Amongst Shias - Most Important   
    (bismillah)
    Dear brothers and sisters.
    Lately I have noticed that Shiachat and it's members, including me have changed for the worse. Shiachat in itself is just a website, but it is also the biggest shia community. Granted that it is digital, but in todays day and age, it is equally reflective and mirrors what shias believe and how they behave than it does in physical life. Perhaps even more.
    However, we are in a bad spot here. I am talking about the behavior and conduct of shiachat members, and their lack of understanding the effects of their words. Both how it affects other shias and how it looks in the eyes of our enemies. I am saying shiachat member, because I myself am a member and take equal part in this act.
    Some points:
    1. Issue: We are constantly criticizing the Ulama. Now this in itself is ok, but everyone knows by now that it has gotten way out of hand. We all have different marjas, and we all have different opinions on their actions. But that does not give us the right to cause turmoil in public. Shiachat, is public, and the worst thing we can do is to show the enemies of AhlulBayt that we have such low opinions about each other.
    It often turns into personal insults and really bad behavior in the name of criticizing. What this does is create hatred towards each other, and nothing.....NOTHING, pleases the wahabis more than this. I have witnessed now from a discussion that i had with a wahabi that we are in bad shape. He specifically pointed out shiachat, and i had nothing to defend our behavior with. It truly broke my spirit, hence me making this thread.
    1. Solution: No matter how the Marjas behave and how much we disagree, we must remember we are in the same camp. Marjas are our generals and we are the soldiers. The generals might disagree, and some generals might misbehave. But that does not give us the right to disrupt the peace between ourselves. The only thing we have in this world is Allah, Ahlulbayt and our brothers and sisters in faith.
    Let us now focus on creating threads that show the unity we have. Let us create threads that are intellectual and smart in purpose. Let us create posts and threads that promote Shia Islam, not tare it down. This is what discomforts the wahabis and whoever is against the Ahlulbayt. This is what causes their despair and strikes fear in their heart, our strong unity.
    If we happen to create threads that show sings of getting out of hand, it is the responsibility of every shia to respond with respect and behavior that the Ahlulbayt has taught us. Speak gently, and if someone disagrees, then respond respectfully and with dignity. If someone does go out of hand, let's all join in and stop such behavior.
    I am certain, that when Imam Mahdi looks upon our behavior as of late, and i am sure he does, he is extremely disappointed. There is nothing wrong with holding back and controlling what you want to say.
    Let us respect each others marjas and ulama, no matter how much we disagree, and show the world that we stand united regardless. I know it might sound cheesy, but this is the way it should be. If you don't believe in the Marja of your fellow brother or sister, at least believe in the brother or sister themselves and love them mainly because they love AhlulBayt. This is the code of Ziyarat Ashura!
    2. Issue: Nationalism! Even though we perhaps never mention the nationality that we have a problem with, the undertone is there. What is this nonsense? Since when did Allah or Ahlulbayt love anyone for their passport and place of birth? It is clear as day that we have issues with nationalities, and sometimes it comes off as a joke, but any sane person that understands linguistics and how it is used, will see that there is a nationalistic tension between members.
    2. Solution: Again, it is the responsibility of shia members to stop this. Everyone must join in and firstly correct their on behavior, secondly be smart and noticing such things, and finally speak out in a proper manner about it.
    3. Issue: The urge to answer. We can see that sometimes someone creates a thread about Yasser Habib, or Nasrullah, or Shirazis, Khamenei, Hezbollah, Iran, Iraq, etc etc. And we have this urge to show our disgust with the article or case that the thread starter is presenting.
    3. Solution: Control your urge as much as you can. You don't have to answer negatively to it every time, there is no purpose to it other than starting a big mess.
    I am not ordering, i am merely asking in the name of Allah and everything that we hold dear, namely the AhlulBayt whom are dearer to us than our parents and our lives that we start changing. Pitch in and be constructive. Our main enemy is wahabis whom are killing Shias day in and day out, and they laugh and point their dirty fingers at us. This is the platform we can use to do our part in showing that no matter how much we disagree on certain issues, we won't let them have the pleasure of seeing it or taking joy from it.
    I hope you take this into consideration.
    Wasalam
  6. Like
    talib e ilm reacted to Basim Ali in Jo hadith dil ko choo gayeeeeeee...   
    (bismillah)

    (salam) ,
    Is topic main wo tamam hadithain paish karoonga inshallah jo mujhay bayhad achi lageen. Barai meherbani ap bhi kijiyay taakay humaray ilm main izaka ho sakay, ya phir sirf paarh kar aik comment ki likh deejiye.... :D
    Aur haan Bhai Ali Huzaifa ki tarah apni hadeethain kaalay ka alawa kisi aur colour main likhiain please.
    Aur haan aik or baat, lamba post dekh kar, susti main aa kar topic band mat kariyega, yeh bohat acha moqa hai taleem hasil karnay ka, haat say mat jaanay dain....
    Ek din Hazrat Jibrael(a.s) Hazoor(s.a.w)
    k pas aye or kaha:
    Allah ne mujhy itni taqat di hai
    k mein sari duniya k darakhton k patay gin sakta hun
    or pani k sarey qatray
    or rait k sarey zaray gin sakta hun
    lekin
    us admi per Allah ki rehmat ki tadaad nahin gin sakta
    jo Aap(s.a.w) per sirf ek bar Darood parhta hai!!
    "Jo qadam Namaz e Jumma ki taraf
    chal ker jatey hain, us par Jhanum ki
    aag HARAM hai"...
    (Imam Jaffer e sadiq (as) )
    "Logon se mail jol es tarhan rakho
    k aggar tum mar jao tu tumharey liye royen
    aur zinda raho tu tum se milna chahein.."
    Hazrat Ali (as)
    Hadees-e-pak
    "jo shakhs sotey waqt Bismilah parta hai,
    Allah Farishton se farmata hai k es ki
    har sans k badley naiki likho"
    "Apni zaban ki taizi
    us maa per mat aazmao
    jis ne tumhein bolna sikhaya"
    (Hazrat Imam Hussain (as) )
    Aik shukhs Imam Jaffar (as) kay paas aya
    Phir kaha kay mujhay Khuda dikh la deejiyay
    Unhon nay kaha, oopar suraj ko dekho
    Usnay kaha kay wo buhat taiz kirnain phenk raha hai, main nahi dekh sakta
    Unhoon nay kaha, tu suraj ko nahi dekh sakta, Khuda ko kya dekhay ga!?
    (wasalam) ,
  7. Like
    talib e ilm got a reaction from AnaAmmar1 in اسلام کی بگڑی ہوئی شکلیں   
    بسم تعالی

     

    خدا وند متعال کا ایک لطف اپنے بندوں پر یہ ہے کہ اس نے ہدایت اور اسباب ہدایت کو بشر کی خلقت سے  پہلے مہیا کردیا، اور ایک جامع اور کامل آئین اسلام کی شکل میں بنا کر بھیجا جو انسان کی زندگی کے تمام شعبوں اور تمام پہلوئوں سے مکمل راہ نجات ہے۔

    پیغمبران خدا نے اپنے فرائض کی انجام دہی میں کس قسم کی کوتاہی نہ کی اور پھر آئمہ اطہار ؑ نے اس آئین کی محافظت کی اور ہمارا افتخار یہ ہے کہ ہمارے تمام آئمہ معصومین اس راہ میں شہید کر دیئے گئے۔

     

     جب اسلام کا بول بالا ہوا اور اس کا پرچم حجاز سے پوری دنیا کے کونے کونے تک پھیل گیا تو اسلام کے مقابلے میں خناّس بھی سکون سے نہ بیٹھے کیونکہ ان کی حکومتیں ان کا اثر رسوخ سب کچھ خطرے میں پڑھ گیا نتیجتاً انہوں نے اسلام کو نابود کرنے کی کوشش کی، مگر اسلام کا پیغام اس قدر جالب تھا کہ روز بر روز اس کے دائرے میں وسعت آتی رہی۔۔۔ جب دشمنان اسلام اس معرکے میں شکست سے دوچار ہوئے اور جان لیا کہ اسلام کا مقابلہ کسی چیز سے ممکن نہیں تو انہوں نے ایک خطرناک حربہ استعمال کیا۔۔۔

     

    اور وہ تھا اسلام کا مقابلہ اسلام کے ذریعے ہی کیا جائے یعنی لوگوں کے سامنے ایسا دین پیش کیا جائے کہ ہمارے اقتدار اور حکومت کو اس سے کسی قسم کا خطرہ لاحق نہ ہو، اور لوگ اس دین پر عمل پیرا ہو کر خوش ہو جائیں کے ہم بڑے دیندار ہیں۔۔

     

     یہ کام باقاعدگی کے ساتھ معاویہ کے دور حکومت میں شروع ہوا۔ معاویہ ایک شاتر سیاست مدار تھا۔ جب معاویہ نے خلافت پر قبضہ کر لیا اور اسے یہ خطرہ محسوس ہوا کہ کہیں مسلمان شورشیں نہ کریں اور اس کے خلاف بغاوت نہ ہو جائے۔۔ تو اس نے اسلام کی طاقت کو اسلام کے خلاف استعمال کرنا شروع کیا، وہ اس طرح کہ اس نے ہزاروں کی تعداد میں خطیبوں، آئم جمعہ اور راویوں کو خریدا اور انکے ذریعے امام علیؑ پر سب و شتم کروایا۔

     

    ان خطیبوں نے معاویہ سے وفاداری کا حق ادا کیا کہ جب امام علی ؑ کی شھادت مسجد کوفہ میں ہوئی تو عوام جو معاویہ کے پروپیگنڈے کا شکار تھی  انہوں نے کہنا شروع کردیا کہ علی کا مسجد میں کیا کام


     
     ساتھ ہی ساتھ معاویہ نے ان لوگوں کے ذریعے جو اس کے سکّوں پر کام کررہے تھے اس نظریہ کو اسلام

    کے نام پر عام کرنا شروع کردیا کہ حکمران اور خلیفہ جیسا بھی ہو اللہ کی طرف سے ہوتا ہے، اس پر اعتراض نہیں کرنا چاہیئے حتی اگر خلیفہ آپ پر ظلم بھی کرے آپ اس کے خلاف کوئی اقدام نہ کریں کیونکہ یہ آپ کی تقدیر ہے جو خدا نے لکھ دی ہے۔

     

    اب ظاہر ہے جب منبر سے اور مقدس افراد کے ذریعے عوام کو یہ بتایا جائے کہ آپ نے خلیفہ کے ظلم و ستم پر اور اس کے انتخاب میں زیادتی کے خلاف آواز نہیں اٹھانی تو پھر کس کی مجال ہے کے ان ظالموں پر اعتراص کرے۔۔ یوں مقدس جگہوں اور مقدس عہدوں کو غیر مقدس اور ناپاک مقاصد کے لئے استعمال کیا جاتا تھا اور آج کے دور میں تو یہ کام زیادہ سرعت سے ہو رہا ہے

    ٌٌٌٌٌٌٌٌٌٌ**************************************************

    بنو امیہ کے اس باطل نظریہ کو ظالم اور ناجائز غاصب حکومتوں کی طرف سے بھرپور پذیرائی ملی اور آج تک مل رہی ہے اور افسوس کی بات یہ ہے کہ اس میں شیعہ یا سنی میں تفریق بھی نہیں کی جاسکتی ہر دو عملاً اسی نظریہ کو قبول کئے ہوئے ہیں، البتہ مختلف عنوانات کے ساتھ۔۔۔

     

    علامہ اقبال نے اس فکر کو شعر کی صورت میں ڈھال کر در حقیقت اپنا دردِ دل یوں بیان کیا ہے

     

    خبر نہیں کیا ہے نام اس کا خدا فریبی کہ خود فریبی

    عمل سے فارغ ہوا مسلمان بنا کے تقدیر کا بہانہ 

     

    ایک اسلام کی وہ شکل ہے جسے امریکہ بہت پسند کرتا ہے، امام خمینی فرماتے ہیں یہ اسلام امریکائی یا متہجرانہ اسلام ہے یہ وہ اسلام ہے جس میں آپ اپنی عبادات میں مشغول رہیں دینی رسومات انجام دیں آپ کو کوئی تکلیف نہیں پہنچائے گا، بلکہ اس اسلام کو امریکہ بھی پسند کرتا ہے خود اوباما بھی افطار میں شریک ہوتا ہے رمضان اور عیدکی مبارک باد دیتا ہے۔۔

     

    لیکن ایک اور اسلام ہے کہ دشمن جس کی نابودی میں سر تن کی بازی لگادیتا ہے وہ ہے اسلام ناب محمدی۔۔۔۔ یہ وہ اسلام ہے جس پر امریکہ جنگیں مسلط کرتا ہے، اس پر پابندیاں لگاتا ہے، اس کا بائیکاٹ کرتا ہے، کیونکہ یہ اسلام امریکہ کو سکون سے حکومت کرنے نہیں دیتا ہر ظلم پر آواز بلند کرتا ہے، مسلمانوں کو بیدار کرتا ہے یہ پابرہنہ لوگوں کا اسلام ہے جس کا پرچم اس صدی میں حضرت امام خمینی ؒ نے بلند کیا۔۔

     

    آج ہمارے درمیان میں بھی ایسے لوگ موجود ہیں جو تشیع کے نام پر متہجرانہ اور امریکائی اسلام کی تبلیغ پر مامور ہیں۔۔۔ ہمیں ذکر و فکر و ورد میں مصروف رکھتے ہیں تسبیح اور جائ نماز لے کر غار میں جاکر عبادتیں اور چلا کاٹنے کی تبلیغ کرتے ہیں، پیری اور مریدی، اور بھنگڑا، دھمال جس کا کوئی تعلق اسلام سے نہیں اسے اسلام اور تشیع کے نام پر پیش کرتے ہیں، ایسا دین بتاتے ہیں کہ انسان دنیا اور اپنے اطراف سے لاتعلق ہوجائے، اسے بے خبر کر دیتے ہیں کہ تم پر کون سا پست طبقہ حکومت کر رہا ہے، عوام پر کیا ظلم ہو رہے ہیں، معاشرے کی کیا حالت ہے، اجتماعی مسائل کیا ہیں اور فقط اس کاہم و غم ایک ہی بنادیا جاتا ہے کہ جنت میں پلاٹ اور حوریں کتنی بنائیں۔۔۔۔

     

    اسی طرح ایک اور طبقہ اس قسم کی تبلیغ میں مصروف ہے کہ ہمیں امام زمان (عج) کی غیبت میں کچھ نہیں کرنا، کسی ظلم پر آواز بلند نہیں کرنی اگر کوئی ہماری ناموس پر حملہ بھی کرے ہمیں تھپڑ بھی مار دے ہمیں صرف العجل کہنا ہے صبر سے کام لینا ہے۔۔۔۔

     

    جبکہ رسول خدا ﷺ فرماتے ہیں: جو شخص امور مسلمین کی اصلاح کے لئے اہتمام کئے بغیر دن گذار دے وہ مسلمان نہیں

  8. Like
    talib e ilm reacted to SinfulSoul in Phd Topic? Please Help Me Choose One...   
    Thank you very much for all who replied and in particular 'JOY' for her detailed input.
     
    Tbh the idea I had in mind was the following topic:
     

    The Power of the Will – Possessed by All, Utilized by Few
    How to Increase it in the 21st Century for Managers through the eyes of Islam

    I want to explore the above in light of Islam - Since there are many books & literature on Will Power in general - I will need to narrow down my topic - but the more I research the more I tend to find the above discussed maybe not together i.e. willpower + Islam + 21st Century + Managers (Leaders)

    So still kind of confused - I am not really looking to do research that is only for Muslims but something that anybody can read and apply but through Islamic teachings - Hope this makes sense....

    Look forward to more valuable input.

    Wasalaam
  9. Like
    talib e ilm reacted to asifnaqvi in پروین شاکر   
    غلطیوں سے جُدا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    دونوں اِنساں ہیں خُدا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    ہم دونوں اِک دُوسرے کو اِلزام دیتے ہیں مگر
    اپنے اندر جھانکتا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    لوگوں نے کر دیا ہے دونوں میں پیدا اِختلاف
    ورنہ فطرت کا بُرا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    مختلف سمتوں میں دونوں کا سفر جاری رہا
    اِک لمحے کو رُکا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    چاہتے دونوں ہیں اِک دُوسرے کو مگر
    یہ حقیقت مانتا وہ بھی نہیں میں بھی نہیں
    پروین شاکر ۔
  10. Like
    talib e ilm got a reaction from diyaa110 in بڑی مشکل، مخالف کو دشمن بنانا   
    بسم تعالی

     

    یہ بڑی مشکل کا تیسرا مرحلہ ہے اور موضوع ہے اپنے مخالف کو دشمن بنانا حماقت ہے

     

    مخالف اور دشمن بظاہر دو ملتی جلتی اصطلاحات لگتی ہیں لیکن ان دونوں میں  بڑا فرق ہے۔ اگرپاکستان کے شیعہ اور سنی  کو ان دو اصطلاحات کا فرق اور اس کے مصداق کی درست شناخت ہو جائے تو موجودہ صورتحال بہت بہتر ہو سکتی ہے۔

     

    دشمن وہ ہے جو بھڑیئے کی طرح آپ کی جان کا دشمن ہوتا ہے اسکی ہر لحظہ کوشش ہوتی ہے کہ کسی نہ کسی طرح آپ کو نقصان پہنچائے۔ جانی، مالی، نفسیاتی یا کسی بھی قسم کا، اور یہی اس کی دشمنی کا تقاضہ ہے۔

     

    اس کے برعکس مخالف ہیں اورعام طور پر ہر مخالف دوسرے کی جان کا دشمن نہیں ہوتا کہ جس سے وہ اختلاف رکھتا ہے۔ اکثر اوقات اختلاف فقط سوچ ، نظر اور طور طریقے کا ہوتا ہے ممکن ہے دو دوستوں میں کسی موضوع پر اختلاف ہو جائے لیکن اس کے باوجود وہ اچھے دوست ہوں، والدین اور اولاد کا اختلاف، شوہر اور بیوی کا اختلاف یہ سب بظاہر کسی موضوع پر ایک دوسرے کے مخالف ضرور ہیں مگر اپنے رشتہ اور مضبوط بندھن کا پاس رکھتے ہیں اور ایک دوسرے کو احسن طریقے سے تحمل کرتے ہیں اور یہ اختلافات روز مرّہ زندگی میں ہر انسان کے ساتھ پیش آتے رہتے ہیں شاید ہی کوئی مخلوق یہاں ایسی بستی ہو جس کا کسی بھی موضوع پر دوسرے سے کوئی اختلاف نہ ہو۔

     

    لیکن ہمارے ہاں بعض موارد میں مخالف کو احترام کی نگاہ سے دیکھنا بھی جرم سمجھاجاتا ہے۔ اور جو یہ کام انجام دے اسے بھی منافق سمجھا جاتاہے ،اپنے مخالف کی ہر بات کوغلط ثابت کرنے کی کوشش کی جاتی ہے، حتی اگر دن ہو اور ہمارا مخالف  بھی کہہ دے ابھی دن ہے تو بعض تعصب میں اسے بھی جٹھلانے کی کوشش کرتے ہیں۔

     

    اب اگر ہم چاہیں کہ مخالف کو اپنا دشمن بنا لیں تویہ کام بہت آسان ہے مثلاً آپ اپنے مخالف پر طنز ماریں، اس کی توہین و گستاخی کریں یا اس کے خلاف کوئی عملی اور غیر عادلانہ اقدام کریں، اس سے آپکا مخالف دشمن میں تبدیل ہو جاتاہے۔ اور جب تک یہ فرد مخالف تھا ہمارے لئے قابل تحمل تھا، ہمارا دوست تھا ہم اسکے ساتھا اٹھتے بیٹھتے تھے، کھاتے پیتے تھے، لیکن جیسے ہی آپ نے اس کے ساتھ نفرت آمیز سلوک کیا اور اسے اپنا دشمن بنالیا اب اس کے سائے سے بھی محتاط رہیں۔

     

     

    اب ہہی معاملہ اہلسنت کا ہماری نسبت ہے۔ اہلسنت برادران شیعہ مسلّمہ عقیدے کےمطابق مسلمان ہیں۔ کچھ موضوعات میں آپس میں اختلاف ہے، یعنی ان موضوعات میں اہلسنت برادران ہمارے مخالف ہیں۔

     

    اور سب سے بڑی حماقت یہ ہے کہ ان موضوعات کو سرِعام فقط تفریح کی غرض سے اچھالا جائے، ان اختلافی موضوعات میں اپنے مخالف کو فقط نیچا دیکھانے کی کوشش کی غرض سے عام کیا جائے، مخالف پر طنز طعنے کسے جائیں، تبرّہ کے نام پر ان کے مقدسات اور عقائد کی سر عام توہین کی جائے، تعصب اور ہٹ دھرمی دیکھائی جائے، اس عمل سے آپ کا مخالف بھی آپ کا دشمن ہوجائے گا۔۔ اور یوں بڑی آسانی سے ایک احمق اور نادان انسان شیعہ کو سنی کے مقابلے میں لاکر کھڑا کر دیتا ہے۔۔

     

    ممکن ہے کہ بعض یہ کام خالص نیت کے ساتھ انجام دیں اور یہ بھی واضح ہے کہ دشمن بھی یہ کام انتہائی مہارت کے ساتھ انجام دیتا ہے۔ خود نہ شیعہ ہوگا نہ سنی مگر آگ لگانے کے لئے چنگاری کا کام کرے گا۔۔

     

    ہم شیعہ حضرات کو اتنا باشعور اور بیدار ہو جانا چاہیئے کہ ہر اس جگہ جہاں سنی اور شیعہ میں اختلاف کی بوآرہی ہو وہاں ہوشیار ہو جائیں۔۔ گو کہ کوئی سنی اختلاف ڈال رہا ہو وہاں رد عمل ایسا نہ دیکھائیں کہ جلتی پر تیل کا کام کرے ہم شیعہ حضرات کی یہ کمزوریاں ہیں جس سے دشمن فائدہ اٹھاتا ہے۔۔

     

    مثلاً فرض کریں اگر کوئی چاہے کہ کسی جگہ کو یا مثلاً اس فورم کو شیعہ اور سنی کےلئے میدان جنگ بنادے تو یہ کام بہت آسان ہے، مثلاً اگر دشمن یہاں ایک سنی یوزر بن کر آئے اور آکر شیعوں کو برا بھلا کہنا شروع کردے، تو اسکی ایک پوسٹ سے سارا شیعہ چیٹ باآسانی میدان جنگ بن سکتا ہے۔۔۔ تو تصور کریں کیا یہ کام گلی محلّوں، مجالس منبر پر نہیں ہوسکتا ؟

     

    یہ ہم ہیں جو اپنے دشمنوں کی چالوں سے غافل ہیں، لیکن ہمارا دشمن ایک لحظے کے لئے بھی ہم سے غافل نہیں اور شیطانی منصوبے بناتا ہے

  11. Like
    talib e ilm reacted to kamyar in 1394 Norooz Iranian New Year   
    salaam to all , specially Zendegi joon ,
     

  12. Like
    talib e ilm got a reaction from aqeelfair4u in غیبتِ امام (ع) میں حکومت کس کی ہو ؟   
    امام خمینی رحمتہ اللہ علیہ نے خصوصاً اس موضوع کو بہت اہمیت دی ہے، اور حکومت ِ اسلامی کے نام سے ایک بہترین کتاب تحریر کی ہے، جو ہر مسلمان اور خصوصاً شیعہ کو ضرور پڑھنی چاہئے۔۔ اسی طرح شاعر مشرق علامہ اقبال نے دین اور سیاست کی جدائی پر بھرپور شکوہ کیا ہے، اور اپنے کلام میں اکثر امت مسلمہ کو اس جانب متوجہ کیا ہے، کہ یہ جمھوریت شیطان یعنی انگریزوں کا دھوکہ ہے۔۔۔
     
     


     
     

     
     
    A certain European* revealed a secret,  
    Although the wise do not reveal the core of the matter.
     Democracy is a certain form of government in which  
    Men are counted but not weighed.
  13. Like
    talib e ilm got a reaction from diyaa110 in ایک بڑی مشکل   
    بسم تعالی
     
    ایک اہم مسئلہ کی طرف آپ دوستوں کی توجہ دلانا چاہتا ہوں
     
     
    بعض مسائل ایسے ہوتے ہیں جن میں بہت زیادہ دقت اور گہرائی کے ساتھ تحقیق اور جستجو کی ضرورت ہوتی ہے، لہذا پڑھے لکھے معاشروں میں متعلق علم کے ماہر کو دعوت دی جاتی ہے اور ان سے مسئلہ کا حل پوچھا جاتا ہے اور اس کے تجویز کردہ حل کو اہمیت بھی دی جاتی ہے، یا پھرکوئی عام فرد کسی ماہر سے نقلِ قول کرتا ہے کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ ایک ماہر اپنے متعلقہ علمی شعبےمیں ہاتھ کی ہتھیلی کی طرح مانوس ہوتا ہے۔
     
     
    اور ہر مسئلہ تھڑے اور کسی (چوک) پر حل ہونے والا نہیں ہوتا اور نہ ہی ہر مسئلہ اس طرز کا ہوتا ہے کہ ہر ایرا غیرا آکر اس پر اظہار نظر کرے اور اپنی رائے پیش کرے۔۔ بعض دفعہ ایسا کرنے سے بہت نقصان ہوسکتا ہے اگرچہ جو یہ کام کرہا ہو وہ شاید اپنے کام سے مخلص بھی ہو۔۔
     
    مثلاً خدا نہ کرے آپ کا ایک دوست بیمار ہو جاتا ہے تو آپ ایک احسان اس کے حق میں یہ کر سکتے ہیں کہ اسے حکیم یا ڈاکٹر کے پاس لے جائیں اور یہی اپنے دوست سے وفا اور دوستی کا تقاضا ہے، لیکن بعض لوگ محبت اور خلوص میں ایک غلط کام یہ کرتے ہیں کہ خود حکیم تو نہیں ہوتے پھر بھی جیب سے پوڑی یا پھکّی نکال کر مریض کے سامنے رکھ دیتے ہیں اور مریض بیچارہ درد میں مبتلا ہونے کی وجہ سے اپنے دوست پر اعتماد کرتے ہوئے اسے کھا لیتا ہے۔۔ اور بیمار بیمارتر ہو جاتا ہے۔۔ اور تعجب کی بات یہ ہے کہ یہ پوڑی اور پھکّی نما لوگ ڈاکٹر اور حکیم کو برا بھلا بھی کہتے ہیں کہ جو واقعاً بیماری کو دور کرنے کی اہلیت رکھتا ہے۔۔
     
     
    یہی کام بعض نادان انٹرنیٹ پر اور خصوصاً فورمز پر کرتے ہیں، ان کے ذہن میں جہالت اور نادانی کی پوڑیاں ہوتی ہیں، اور وہ لوگوں کے سامنے جب اپنا ذہن خالی کرتے ہیں توعام فہم لوگوں کو گمراہ کرتے ہیں اور مخالفین کو میدان دیتے ہیں کہ ہمارے عقائد کا تمسخر اڑائے، اور یہ کام زیادہ تر قربۃً الا اللہ کیا جاتا ہے۔ جب یہ کسی موضوع پر بات کرتے ہیں تو صاف معلوم ہوجاتاہے کہ خام باتیں ہیں، اور عام طور پر یہ لوگ کسی ماہرِ علم کے قائل نہیں ہوتے اور مجتھد یا مرجع دینی کو عام انسان سے بھی بدتراور خیانت کار شمار کرتے ہیں۔
     
    سب سے بڑی مشکل اس وقت پیش آتی ہے جب ہمارا مخالف ان کی باتوں کو سن کر ہمارے مکتب اور ہماری فکر سے اور دورہوجاتاہے، اور مذہب حقیقی سے بدظن ہوجاتا ہے، ایسا مخلص شخص اپنی جہالت کی وجہ سے دوسروں کو اپنے مذہب سے دور تر کرتا ہے، اور اپنی دانست میں خیال کرتا ہے کہ میں اجر عظیم کا مستحق ہوں کے لوگوں میں ہدایت عام کر رہا ہوں۔۔۔
     
    اب پیشِ خدمت ہیں چند ماڈل جملات اور اس قسم کےدوسرے کلمات جن کی مدد سے آپ ایسے افراد کی باآسانی نشاندہی کرسکتے ہیں:
     
     

    ویسے میں عالم تو نہیں ہوں لیکن میرے خیال سے نماز کے تشھد میں شھادت ثالثہ پڑھنی چاھئے کیونکہ یہ اذان میں پڑھنا بھی ضروری ہے
    میں کوئی مفسّر قرآن تو نہیں ہوں لیکن قرآن کا مقصد یہ بیان کرنا ہے کہ متعہ ایک قبیح عمل ہے۔۔
    میں علامہ یا مجتھد نہیں ہوں مگر زنجیر زنی کرنا ضروری سمجھتا ہوں اور اسے ایمان کا مسئلہ سمجھتا ہوں؟مجتھد ہوتا کون ہے اعتقادی مسائل میں فتوٰی لگانے والا ؟

    ہمیں اپنے سیاسی مسائل میں ولایت فقیھ اور رہبریت کی ضرورت نہیں کیونکہ ولایت فقیھ پر کوئی حدیث وارد نہیں ہوئی ۔۔۔۔ 
    غور کیا آپ نے ایک طرف اپنی جہالت کا اظہار بھی کرتے ہیں اور دوسری طرف اتنے باوثوق انداز میں کسی حق کو جٹھلا بھی دیتے ہیں اور دوسروں کو کنفیوز کرتے ہیں، یہ ایکا دوکّا مثالیں ہیں، نہ جانے ایسی کتنی مثالیں موجود ہیں۔۔۔
     
    امام علی فرماتے ہیں: کہ اگرلوگ اپنی زبان ان امور میں نہ کھولیں جن کے بارے میں نہیں جانتے تو اس جھان کے آدھے مسائل یوں ہی حل ہوجائیں گے۔۔
     
    یہ ہمارے معاشرے کی بڑی مشکلات میں سے ایک ہے کہ علماء و مجتھدین کی قدر نہیں کرتے وہ کہ جنھوں نے اپنی پوری زندگی علوم آلِ محمد کے لئے وقف کردی ہو اسے اپنے برابر بھی نہیں سمجھتے
  14. Like
    talib e ilm got a reaction from alirex in ایک بڑی مشکل   
    بسم تعالی
     
    ایک اہم مسئلہ کی طرف آپ دوستوں کی توجہ دلانا چاہتا ہوں
     
     
    بعض مسائل ایسے ہوتے ہیں جن میں بہت زیادہ دقت اور گہرائی کے ساتھ تحقیق اور جستجو کی ضرورت ہوتی ہے، لہذا پڑھے لکھے معاشروں میں متعلق علم کے ماہر کو دعوت دی جاتی ہے اور ان سے مسئلہ کا حل پوچھا جاتا ہے اور اس کے تجویز کردہ حل کو اہمیت بھی دی جاتی ہے، یا پھرکوئی عام فرد کسی ماہر سے نقلِ قول کرتا ہے کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ ایک ماہر اپنے متعلقہ علمی شعبےمیں ہاتھ کی ہتھیلی کی طرح مانوس ہوتا ہے۔
     
     
    اور ہر مسئلہ تھڑے اور کسی (چوک) پر حل ہونے والا نہیں ہوتا اور نہ ہی ہر مسئلہ اس طرز کا ہوتا ہے کہ ہر ایرا غیرا آکر اس پر اظہار نظر کرے اور اپنی رائے پیش کرے۔۔ بعض دفعہ ایسا کرنے سے بہت نقصان ہوسکتا ہے اگرچہ جو یہ کام کرہا ہو وہ شاید اپنے کام سے مخلص بھی ہو۔۔
     
    مثلاً خدا نہ کرے آپ کا ایک دوست بیمار ہو جاتا ہے تو آپ ایک احسان اس کے حق میں یہ کر سکتے ہیں کہ اسے حکیم یا ڈاکٹر کے پاس لے جائیں اور یہی اپنے دوست سے وفا اور دوستی کا تقاضا ہے، لیکن بعض لوگ محبت اور خلوص میں ایک غلط کام یہ کرتے ہیں کہ خود حکیم تو نہیں ہوتے پھر بھی جیب سے پوڑی یا پھکّی نکال کر مریض کے سامنے رکھ دیتے ہیں اور مریض بیچارہ درد میں مبتلا ہونے کی وجہ سے اپنے دوست پر اعتماد کرتے ہوئے اسے کھا لیتا ہے۔۔ اور بیمار بیمارتر ہو جاتا ہے۔۔ اور تعجب کی بات یہ ہے کہ یہ پوڑی اور پھکّی نما لوگ ڈاکٹر اور حکیم کو برا بھلا بھی کہتے ہیں کہ جو واقعاً بیماری کو دور کرنے کی اہلیت رکھتا ہے۔۔
     
     
    یہی کام بعض نادان انٹرنیٹ پر اور خصوصاً فورمز پر کرتے ہیں، ان کے ذہن میں جہالت اور نادانی کی پوڑیاں ہوتی ہیں، اور وہ لوگوں کے سامنے جب اپنا ذہن خالی کرتے ہیں توعام فہم لوگوں کو گمراہ کرتے ہیں اور مخالفین کو میدان دیتے ہیں کہ ہمارے عقائد کا تمسخر اڑائے، اور یہ کام زیادہ تر قربۃً الا اللہ کیا جاتا ہے۔ جب یہ کسی موضوع پر بات کرتے ہیں تو صاف معلوم ہوجاتاہے کہ خام باتیں ہیں، اور عام طور پر یہ لوگ کسی ماہرِ علم کے قائل نہیں ہوتے اور مجتھد یا مرجع دینی کو عام انسان سے بھی بدتراور خیانت کار شمار کرتے ہیں۔
     
    سب سے بڑی مشکل اس وقت پیش آتی ہے جب ہمارا مخالف ان کی باتوں کو سن کر ہمارے مکتب اور ہماری فکر سے اور دورہوجاتاہے، اور مذہب حقیقی سے بدظن ہوجاتا ہے، ایسا مخلص شخص اپنی جہالت کی وجہ سے دوسروں کو اپنے مذہب سے دور تر کرتا ہے، اور اپنی دانست میں خیال کرتا ہے کہ میں اجر عظیم کا مستحق ہوں کے لوگوں میں ہدایت عام کر رہا ہوں۔۔۔
     
    اب پیشِ خدمت ہیں چند ماڈل جملات اور اس قسم کےدوسرے کلمات جن کی مدد سے آپ ایسے افراد کی باآسانی نشاندہی کرسکتے ہیں:
     
     

    ویسے میں عالم تو نہیں ہوں لیکن میرے خیال سے نماز کے تشھد میں شھادت ثالثہ پڑھنی چاھئے کیونکہ یہ اذان میں پڑھنا بھی ضروری ہے
    میں کوئی مفسّر قرآن تو نہیں ہوں لیکن قرآن کا مقصد یہ بیان کرنا ہے کہ متعہ ایک قبیح عمل ہے۔۔
    میں علامہ یا مجتھد نہیں ہوں مگر زنجیر زنی کرنا ضروری سمجھتا ہوں اور اسے ایمان کا مسئلہ سمجھتا ہوں؟مجتھد ہوتا کون ہے اعتقادی مسائل میں فتوٰی لگانے والا ؟

    ہمیں اپنے سیاسی مسائل میں ولایت فقیھ اور رہبریت کی ضرورت نہیں کیونکہ ولایت فقیھ پر کوئی حدیث وارد نہیں ہوئی ۔۔۔۔ 
    غور کیا آپ نے ایک طرف اپنی جہالت کا اظہار بھی کرتے ہیں اور دوسری طرف اتنے باوثوق انداز میں کسی حق کو جٹھلا بھی دیتے ہیں اور دوسروں کو کنفیوز کرتے ہیں، یہ ایکا دوکّا مثالیں ہیں، نہ جانے ایسی کتنی مثالیں موجود ہیں۔۔۔
     
    امام علی فرماتے ہیں: کہ اگرلوگ اپنی زبان ان امور میں نہ کھولیں جن کے بارے میں نہیں جانتے تو اس جھان کے آدھے مسائل یوں ہی حل ہوجائیں گے۔۔
     
    یہ ہمارے معاشرے کی بڑی مشکلات میں سے ایک ہے کہ علماء و مجتھدین کی قدر نہیں کرتے وہ کہ جنھوں نے اپنی پوری زندگی علوم آلِ محمد کے لئے وقف کردی ہو اسے اپنے برابر بھی نہیں سمجھتے
  15. Like
    talib e ilm got a reaction from alirex in Zakhm - A Mahesh Bhatt Film (Urdu)   
    کسی معصوم علیہ سلام سے یہ حدیث منقول ہے کہ اپنے کسی چائنے والے سے مخاطب ہو کر فرماتے ہیں

     

    اگر تم کوئی نیکی کرو تو یہ اس سے بہت بہتر ہے کہ دوسرے کریں اور اگر تم کوئی برائی کرو تو یہ اس سے بہت ہی برہ ہے کہ اگر دوسرے کریں کیونکہ تمھاری نسبت ہم سے ہے۰

    تم ہمارے لئے باعث عزت بنو نہ باعث ذلت

     

    آج دنیا اہلیبیت کو ان کے چاہنے والوں کے ذریعے پہچانتی ہے

     

    کیا آج ہمارے پاس دنیا کو دیکھانے کے لئے کوئی اسوہ یا رول ماڈل نہیں ؟ جو ہم فاسد اسوے ڈھونڈتے پھریں ؟

  16. Like
    talib e ilm reacted to sharib in mutta   
    Salam ,
    you have a point dear.I also see "bint-e ali" as a case of impersonification [as Shia].
    The debate can be done even without disguising oneself as Shia.
    Mut-aa is not a black spot on Shism that Shias will hesitate to debate on it.
    wassalam
  17. Like
    talib e ilm got a reaction from aqeelfair4u in غیبتِ امام (ع) میں حکومت کس کی ہو ؟   
    اگر ہم دین اسلام کو مد نظر نہ بھی رکھیں تو بھی حکومت کی ضرورت بلا شک و شبہ واضح ہے

    اللہ تعالی نے انسان کو معاشرتی مخلوق بنایا ہے انسان کے نفس کے اندر اچھائیوں کے ساتھ برائیاں بھی موجود ہے، حرص لالچ اور دیگر منفی صفات بھی انسان میں پنپنا شروع ہو جاتی ہیں، اور سب تزکیہ نفس کے قابل بھی نہیں ہوتے۔

    اگر ایک انسان مجرم بن جائے اوراسکے جرائم بڑھتے چلے جائیں تو کون سی قوت و طاقت ہے کہ جس کے ذریعے لوگ اس کے مظالم سے محفوظ رہ سکیں ؟؟ مثلاً ایک چشمہ جو سب کو سیراب کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے لیکن ایک طاقتور آکر سارے چشمے پر قبضہ کرلے اور سب کو محروم کر دے تو کون اسے روکے گا ؟ وہی کام جو امریکہ اور اسرائیل آج کررہے ہیں

    اسی طرح کون انسانوں کی ساری ضروریات پوری کر سکتا ہے؟ ایک انسان سارے کام خود نہیں کرسکتا، مثلاً خود ہی کسان بھی ہو اپنے لباس کے لئے درزی بھی ہو، اور مکان بنانےکے لئے انجنئر بھی ہو، بجلی بھی خود بنائے اور اپنا جوتا بھی خود سیئے یہ ممکن نہیں، انسان کی صلاحیتیں اور استعداد محدود ہیں،اور مجبور ہےکہ دوسرے انسانوں کے ساتھ ملے اور تبادلہ کرے یا معاشرت کرے ۔۔ 

    معاشرہ اس طرح وجود میں آتا ہے، اور جب خاندان آباد ہوتے ہیں تو مفادات کا ٹکرائو ہوتا ہے، مظلوم اور ضعیف ہمیشہ پستا چلا جاتا ہے اور طاقتور مزید طاقتور تر ہو جاتا ہے، لہذا حکومت کی ضرورت ہے کہ مجرمین کو پکڑا جائے، اور قابو کیا جائے۔۔۔ حکومت انسان کی تمام اجتماعی ضروریات کو بھی پورا کرتی ہے۔۔۔ بغیر حکومت کے مجرمین مظلومین کو کچلتے ہیں۔۔ 

    اسی طرح فاسد حکومت بھی نقصان دہ ہے لیکن حکومت کا عدم وجود اس سے بدتر ہے، صدام کی حکومت میں ۴ لاکھ مارے گئے اور جب صدام کو پھانسی دی گئی اور اب کوئی حکومت نہ تھی تو ان تین سے چار سالوں میں ۲۰ لاکھ لوگ مارے گئے۔۔ حکومت اگر کمزور پڑھ جائے یا ختم ہو جائیں تو سرکش مجرمین سر اٹھاتے ہیں۔۔ 

    امام علی کو جب حق سے محروم کیا گیا اور لوگوں نے امام کا حق ماننے سے انکار کر دیا تو شجاعت اپنے عروج پر ہونے کے باوجود تلوار نیام میں رکھ لی کیونکہ فاسد حکومت پھر بہتر ہے اس بات سے کہ اصلاً کسی کی بھی حکومت نہ ہو۔۔ کیونکہ اس سے زیادہ قتل و غارت اور خون خرابہ ہوتاہے۔۔

    روایات: کتاب الغارات میں ہے کہ امام علی فرماتے ہیں
    لوگوں کی اصلاح صرف امام کر سکتا ہے وہ امام یا تو پاکیزہ عادل ہوگا یا فاسق فاجر ہوگا۔۔

    یہاں کلمہ امام حاکم کے طور پر استعمال ہوا ہے۔۔

    نہج البلاغہ خطبہ ۴۰ صفحہ ۸۲میں ہے
    لوگوں کے لئے ایک امیر کو ہونا ضروری ہے چاہے وہ عادل ہو یا فاسد و فاجر ہو۔

    حکومت کا مقصد ظالم سے اس کا منصب اور دولت چھین کر مظلوم کو دینا ہے، تاکہ معاشرہ کمال کی طرف بڑھےاسی حق کی ادائیگی کے لئے امام علی نے خلافت قبول کی تھی، اور نہج البلاغہ میں ہے کہ 
    اگر مظلوم کو اس کا حق دلانا مقصود نہ ہوتا تو کبھی میں خلافت قبول نہ کرتا۔۔

    تاریخ بشریت میں کوئی ایسا دور نہیں گذرا کہ لوگوں پر کوئی حکومت مسلط نہ ہو، معاشرے ہمیشہ حکومتوں کے زیرِ سایہ رہے ہیں، یا تو الہی حکومت کے زیرِ سایہ یا غیر الہی۔۔

    انسانی خود ساختہ نظاموں میں سے ڈیموکرسی، بادشاہت، سوشلزم لبرلزم ، سرمایہ دارانہ نظام اور دیگر ہیں۔۔۔ البتہ سرمایہ دارانہ نظام کے سیاسی تفکر کا نام ڈیموکرسی ہے۔۔

    اس کے مقابلے میں ایک نظام اسلام ہے، حکومتِ اسلامی ہے
  18. Like
    talib e ilm got a reaction from Hasan0404 in I Am Sunni. But I Do No Believe In Muawiya Lanati.   
    A joke:
    Aik shaks Shaam gaya waha Aik mazar k pas kharay ho kar kisi sey pochta hai yay kis ka Mazar hai, us nay kaha
     
    Yay Hazrat e Hujr Ibn e Adi (ra) ka mazar hai jo Hazrat Ali (ra) k sahabi thay
     
    phir Sawal kia: " inhay kis nay Shaheed kia?"
     
    us nay jawab deya: "inhay Hazrat e Mavia (ra) nay shaheed kia!"
  19. Like
    talib e ilm reacted to khakay batool in khilafat   
    salam,
    hamarey khayal sey, Hazrat Ali[as] ka teeno khalifaaon ki Baiyat kerney sey inkaar hi, un ka munafiqon kay khilaaf talwar uthanay k baraber tha.
    ws
  20. Like
    talib e ilm reacted to sharib in khilafat   
    Salam ,
    1.Abdullah ibne Ubay was a munafiq well known to Prophet Muhaamad(saw) and around him, why did he not get him killed?
    Hz. Ali tolerated Munafiqs for the same reasons for which Prophet tolerated munafiqs around him.
    The action and course adopted by HZ.ALI was in accordance with the tradition of Rasool Allah in this regards ...... befitting to the time and occasion.
    2. The ayat you have quoted is not to be taken as the license to kill mushrik and munafiqs blindly .... for Quran says " la ikraha fid-din".....So munafiqs and mushriks around you are not to be killed simply just because they are so.......
    You have not understood the correct interpretation of that ayat, I am afraid.
    Now you have to tell us why Prophet tolerated Munafiqs around him...even in the ranks of sahaba were also munafiqs.....did Prophet get them killed?

    If ...yes pls quote....
    If no .....why ? If you can reply.
    So I repeat : all those reasons for which Prophet tolerated Munafiqs ...Hz. Ali also tolerated them.
    wassalam
  21. Like
    talib e ilm got a reaction from Wahdat in Rohani Official Wants Old Iranian Flag Back   
    Such a nice response by Imam Khomeini “The flag of Iran should not be a monarchist flag. The symbols should not be related to monarchy. The symbols should be Islamic. This cursed lion and sun symbol should be removed from all the ministries and offices. Anything resembling monarchy should be removed. The flag of Islam should be up.”  We do not worship Iran, we worship Allah. For patriotism is another name for paganism. I say let this land [iran] burn. I say let this land go up in smoke, provided Islam emerges triumphant in the rest of the world.Imam Syed Ruhallah Mosvi Al- Khomeini R.A Allama Iqbal Said!! This is the destiny of nature; this is the secret of Islam—
    World‐wide brotherhood, an abundance of love! Break the idols of colour and blood and become lost in the community.Let neither Turanians, Iranians nor Afghan remain.
  22. Like
    talib e ilm reacted to repenter-gone4awhile in Why Has Sistani Removed "ayatollah Al Ozma"   
    Ok there ;).
     
    Gotta tell you, i honestly thought it would be harder to make you pop and show your true colors. It was easier than i expected. Thank you for your repeated ranting contribution. 
  23. Like
    talib e ilm reacted to Haydar Husayn in Rohani Official Wants Old Iranian Flag Back   
    So having an overtly religious flag has terrorist connotations? In Islam, Muslim identity comes first and foremost, and there is nothing wrong with having a flag that represents that. Nationalism is not something that is really encouraged in any case.
  24. Like
    talib e ilm reacted to skylight2 in Rohani Official Wants Old Iranian Flag Back   
    the current Iranian flag is one awesome flag ... a unified message in one symbol that  says: لااله الا الله - a (amongst many) problem with Rohani is that he has surrounded himself with all kinds of silly liberals and persian nationalists 
  25. Like
    talib e ilm got a reaction from Modest Muslim in امام خمینیؒ نویدِ اقبال ہیں   
    علامہ اقبال نے امام خمینیؒ کی پیدائش سے کئی سال قبل ملّتِ ایران کو امام خمینیؒ کی بشارت دی کہ میں وہ مرد دیکھ رہا ہوں جو تمھاری غلامی کی زنجیروں کو توڑنے آرہا ہے۔۔   
     
    اے جوانانِ عجم
     
    چوں چراغِ لالہ سوزم در خیابانِ شما​اے جوانانِ عجم جانِ من و جانِ شما​​اے جوانانِ عجم! مجھے اپنی اور تمہاری جان کی قسم ہے کہ میں تمہارے چمن میں لالہ کے چراغ کی طرح جل رہا ہوں۔​​غوطہ ہا زد در ضمیرِ زندگی اندیشہ ام​تا بدست آوردہ ام افکارِ پنہانِ شما​​میری سوچ نے زندگی کے ضمیر میں بہت غوطے لگائے ہیں، تب کہیں جا کر مجھے تمہارے پوشیدہ افکار کا حصول ہوا ہے۔​​مہر و مہ دیدم نگاہم برتر از پرویں گذشت​ریختم طرحِ حرم در کافرستانِ شما​​میں نے سورج اور چاند کا گہرا مشاہدہ کیا، حتیٰ کہ میری نگاہ ستاروں کے جھرمٹ سے بھی آگے نکل گئی۔ (اس گہرے سوچ بچار کے بعد) میں نے تمہارے کافرستان میں حرم کی بنیاد رکھ دی ہے۔​​تا سنانش تیز تر گردد فرو پیچیدمش​شعلہ اے آشفتہ بود اندر بیابانِ شما​​تاکہ اُس آشفتہ شعلے کی نوک اور تیز ہو جائے جو تمہارے بیابان میں اب تک آوارہ تھا، میں نے اسے یکجا کر کے لپیٹ لیا ہے۔ (یعنی تمہارے پراکندہ خیالات کو یکجا کر لیا ہے تاکہ اُن کی توانائی اور زیادہ ہو جائے۔)​​فکرِ رنگینم کند نذرِ تہی دستانِ شرق​پارۂ لعلے کہ دارم از بدخشانِ شما​​تمہارے بدخشاں سے جو لعل کا ٹکرا میرے پاس ہے اُسے میری رنگین فکر مشرق کے تہی دست لوگوں کو نذر کر رہی ہے۔​​می رسد مردے کہ زنجیرِ غلاماں بشکند​دیدہ ام از روزنِ دیوارِ زندانِ شما​​وہ مرد آ رہا ہے (یا آنے والا ہے) جو غلاموں کی زنجیریں توڑ کر اُنہیں آزادی دلائے گا۔ میں نے تمہارے زندان کی دیوار کے روشن دان سے اُسے دیکھا ہے۔​​حلقہ گردِ من زنید اے پیکرانِ آب و گل​آتشے در سینہ دارم از نیاکانِ شما​​اے آب و گل کے بنے ہوئے لوگو! آؤ میرے گرد حلقہ بناؤ، میرے سینے میں جو آگ جل رہی ہے وہ میں نے تمہارے ہی اجداد سے لی ہے۔​ ماخوذ از زبورِ عجم​ 
×
×
  • Create New...