Jump to content
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!) ×
Guests can now reply in ALL forum topics (No registration required!)
In the Name of God بسم الله

sharib

Advanced Members
  • Content Count

    1,091
  • Joined

  • Last visited

About sharib

  • Rank
    Level 4 Member

Previous Fields

  • Gender
    Male

Recent Profile Visitors

3,152 profile views
  1. salamalikum, Barai mehrbani is sher وفا تھی آخری حد پر میانِ احمد و حیدر شہنشاہِ وفا وہ حد بھی پیچھے چھوڑے جاتے ہیں ko yun padhein وفا کی آخری وہ حد جو طے کی تھی زمانے نے شہنشاہِ وفا اُس حد کو پیچھے چھوڑے جاتے ہیں
  2. مدحت مولا عبّاس (سید اقبال رضوی شارب) Misra e tarah hai ""لئے عبّاس کو گودی میں حیدر مسکراتے ہیں " فرشتے جھومتے جنّ و بشر آنکھیں بچھاتے ہیں علی کے گھر میں لو عبّاس ڈھارس بن کے آتے ہیں قسیمِ نار و جنّت سے جو مومن لو لگاتے ہیں کبھی بہکیں بھی تو وہ راہ حق پر لوٹ آتے ہیں جہاں حسنین سے شمس و قمر آنگن میں ہوں روشن وہاں عبّاس مثلِ نجم خود بھی جگمگاتے ہیں خطِ عصمت سے گویا فاصلہ کچھ بھی نہیں انکا نہیں معصوم پھر بھی عصمتی جوہر دکھا تے ہیں کوئی اپنی شباہت دیکھ ہولے سے ہو خوش جیسے "لئے عبّاس کو گودی میں حیدر مسکراتے ہیں " جری کی شدّتِ دھاکِ شجاعت کو سلام اپنا فقط نظروں سے کھینچی خط سے لشکر سہمے جاتے ہیں رگوں میں دوڑتا ہے جو لہو وہ بو ترابی ہے تبھی چھ ماہ کے اصغر بھی اکبر ہوتے جاتے ہیں وفا تھی آخری حد پر میانِ احمد و حیدر شہنشاہِ وفا وہ حد بھی پیچھے چھوڑے جاتے ہیں یزیدی فوج دریا سے چھٹی تھی مثلِ کائی کے ہوا جب شور دیکھو دیکھو اب عبّاس آتے ہیں بہت سادہ نہیں جیسے کہ دکھتے ہیں میاں شارب ثناء کے شعر سے جنّت میں اپنا گھر بناتے ہیں
  3. سید اقبال رضوی شارب (بحضور پانچویں علی امام محمّد باقر ع ) قراں میں شجرۂ طیّب کی جو تحریر رکھتے ہیں وہی شبّر بھی رکھتے ہیں وہی شبّیر رکھتے ہیں کھلے کیونکر نہ پھر ان سے طریقِ علم و فن آخر بطورِ جد جو شہرِ علم کی جاگیر رکھتے ہیں خوشی سے جھوم اٹھی جابر کی پتھرائی ہوئی آنکھیں ملیں پانچوں علی سے سب کہاں تقدیر رکھتے ہیں * نہ اسکی چل سکی دھمکی چلا سکّہ الہی کا ** شرِ قیصر کی مولا ایسی کچھ تدبیر رکھتے ہیں زمانہ کرتا آیا دشمنی عصمت کے پاروں سے کچھ اب بھی اپنے دل میں بغض کی شمشیر رکھتے ہیں وہی جس در پہ آتی تھی ستارہ بھی وہیں اترا یہ سب عالین ہیں سب سے الگ تنویر رکھتے ہیں وہی ہو سکتے ہیں باقر تمہارے علم کے منکر جو کوتاہِ خرد اور ذہن میں تقصیر رکھتے ہیں فضائل جب بھی اہلِ بیت کے لکھ کر اٹھوں شارب تو یوں لگتا ہے گویا ہم بھی کچھ توقیر رکھتے ہیں * Turkey zaban mein Imam Baquir ko Panchwan Ali bhi kaha jata hai. ** Khalifa Abdul Malik Ibn e Marwan ne Imam Baquir ke mashware pr who sikkey raij kiye jisme ek tarf Allah ka aur Doosri tataf Rasool ka zikr tha. Yh jab hua jb Qaiser Rome ne dhamki di k who apni currency per Rasool k liye nazeba alfaz likhwa dega. Imam ne mashwara diya kh tamam saltante islamiya mein roman currency ko illegal declare kr do aur islami sikka jari karo.
  4. wassalam bhai Jazakallah bhot shukria marhoomeen key haq mein aap ne dua ki.
  5. منقبت حضرت فاطمہ زہرا سلام‌ اللہ علیہا ( سید اقبال رضوی شارب ) مادرِ حسنین اور امِّ ابیہا فاطمہ ساقیِ کوثر کی لا ثانی رفیقہ فاطمہ جسکو بلواتا سرِ دربار اے حاکم وہ ہے مرکزِ تطہیر ،صِدِّیقہ حنیفہ فاطمہ آج تک ہے دم بہ خود غاصب ترے خطبے کے بعد آئینہ قرآں کا وہ تونے دکھایا فاطمہ سورۂ کوثر ہوئی نازل ستائش میں تری انِّما نے بڑھ کے خود حلقہ بنایا فاطمہ فیض کل پاتا رہا سرکار سے صنفِ قوی صنفِ نازک نے بہت کچھ تجھ سے پایا فاطمہ کون بن سکتا تھا حیدر کی بھلا ڈھال و سپر وہ بھی تو نے بعد مرسل کر دکھایا فاطمہ مل نہیں سکتی شفاعت ہے یقیں شارب اسے جس نے تیرا دل ذرا سا بھی دکھایا فاطمہ
  6. Salaam alikum, aap sabhi hazraat ka main tah e dil se mamnoon hun k aap ne meri diljuee ka saman mohaiyya kiya. aur himmat bandhai. jawab mein Der is liye huee k waldeh ke inteqal ke 11 wen din mere bradar e nisbati (chhoti bahan key shauhar) syed haider raza bhi is dar e fani se kooch kr gaye. Ek sura e fateha ki aur guzarish hai. wassalam
  7. Dear co-members, With a very heavy heart I am penning down these few words that my mother Mrs. Kaniz Murtaza,bint e Fazal Imam left for heavenly abode on Dec 30th 2019. Inna lillahe wa inna ilahe rajeoon. I rushed to Lucknow from Doha to see her for the last time and came back today only. She was my first teacher who taught me Arabic for the purpose of Qur'an recitation even before she sent me to the nursery class. Right now I can not write what all is coming to my memories . I lost my father 10 years ago on 28th Dec 2009. A thread "ab main yateem hun " was written then in this Urdu Section. I request you to recite sura e fateha for her. بجز فردوس ہو سکتا نہیں مسکن کہیں انکا کنیز مرتضیٰ تھیں اور کنیز فاطمہ تھیں وہ کنیز مرتضیٰ مرحومہ بنت فضل امام مرحوم اہلیہ سید مرتضیٰ حسین رضوی مرحوم wassalam syed iqbal Rizvi sharib
  8. سید اقبال رضوی "شارب " بہ حضور امام حسن عسکری( ع جشْن مولا جو مناؤ تو کوئی بات بنے مل کے نعرہ جو لگاؤ تو کوئی بات بنے مسکراہٹ سے چمک اٹّھے یہ دنیا ساری عید اک ایسی مناؤ تو کوئی بات بنے عسکری رعب ہو اخلاق مدینے والا ایسا رہبر کہیں پاؤ تو کوئی بات بنے بولے ہادیِ دہم خط مرا لے جاؤ بشیر* بی بی نرجس کو جو لاؤ تو کوئی بات بنے کھا کے مات اپنے ہی شاگردوں سے بولا اسحاق ** مجھ کو مولا سے ملاؤ تو کوئی بات بنے معتمد نام تھا اور قتل کیا تھا عمداً یہ حقیقت نہ چھپاؤ تو کوئی بات بنے جیتے جی قید تھے جس جا وہی مدفن ٹھہرا کچھ مصائب بھی سناؤ تو کوئی بات بنے دل زیارت سے کبھی بھی نہیں بھرتا مولا پھر سے شارب کو بلاؤ تو کوئی بات بنے ------------------------------------------------------------------------------------------- *بشیر کو دسویں امام نے ٢٢٠ درہم اور خط دے کے بھیجا تھا ** اسحاق کلندی جس نے قرآن کے خلاف تحریریں لکھی تھیں اور اسکے شاگردوں نے مولا سے علم حاصل کر کے جب اسکو لاجواب کر دیا تو اسنے مولا کی زیارت کی خواہش ظاہر کی
  9. Salamalikum, A couple of ashaar are further added. Kindly go through it. Thank you. نعت دل میں اتری ہے کچھ اس طرح محبّت انکی صدقے ماں باپ کروں ایسی ہے الفت انکی رب نے لکھ دی ہے جو قرآں میں فضیلت انکی اب کوئی ہم میں سے کیا لکّھے گا مدحت انکی ہم پہ رحمت ہے عنایت ہے نبوت انکی ہم تو قاصر ہیں بیاں کرنے سے شفقت انکی بغضِ حیدر پہ بھی فردوس کا دعوا ہے جنھیں مثلِ شدّاد ہی ہو سکتی ہے جنّت انکی ہم ہیں عشّاقِ نبی شہر مدینہ سے ہمیں آج بھی ملنے چلی آتی ہے نکہت انکی اپنے محبوب کو پہلے تو بنایا اس نے اور پھر جز کیا ایماں کا رسالت انکی گو کہ بھیجا انھیں کل نبیوں میں سب سے آخر ہاں مگر رکھ دی سبھی نبیوں پہ سبقت انکی انکی آواز پہ آواز کو حاوی جو کریں رب نے قرآن میں کر دی ہے مذمّت انکی اصل تاریخ نصابوں میں پڑھاتے نہیں وہ ڈر ہے کھل جائے نہ دنیا پہ حقیقت انکی انگلیاں کٹ نہیں سکتی تھیں زلیخا تیری ہوش ہوتا ہی کہاں دیکھ کے صورت انکی مجھ سے عاصی پہ عنایت سے عیاں ہے شارب ڈھونڈ لیتی ہے گنہگار کو رحمت انکی
  10. نعت سید اقبال رضوی شارب ہم پہ رحمت ہے عنایت ہے نبوت انکی ہم تو قاصر ہیں بیاں کرنے سے عظمت انکی رب نے لکھ دی ہے جو قرآں میں فضیلت انکی اب کوئی ہم میں سے کیا لکھے گا مدحت انکی اپنے محبوب کو پہلے تو بنایا اس نے اور پھر جز کیا ایماں کا رسالت انکی گو کہ بھیجا انھیں کل نبیوں میں سب سے آخر ہاں مگر رکھ دی سبھی نبیوں پہ سبقت انکی ہم ہیں عشّاق نبی شہر مدینہ سے ہمیں آج بھی ملنے چلی آتی ہے نکہت انکی بغض حیدر پہ بھی فردوس کا دعوا ہے جنھیں مثلِ شدّاد ہی ہو سکتی ہے جنّت انکی پیشِ مرسل تھا کیا شعلہ بیانی جن نے رب نے قرآن میں لکھ دی ہے مذمْت انکی دیں کی تاریخ نصابوں میں پڑھاتے نہیں وہ ڈر ہے کھل جائے نہ سچ مچ میں حقیقت انکی مجھ سے عاصی پہ عنایت سے عیاں ہے شارب ڈھونڈ لیتی ہے گنہگار کو رحمت انکی
  11. نعت از سید اقبال رضوی شارب ہم پہ رحمت بھی عنایت بھی ہے خلقت انکی ہم توقاصر ہیں بیاں کرنے سے عظمت انکی رب نے لکھ دی ہے جو قرآں میں فضیلت انکی اب کوئی ہم میں سے کیا لکّھے گا مدحت انکی اپنے محبوب کو پہلے تو بنایا اس نے اور پھرجز کیا ایماں کا رسالت انکی گو کہ بھیجا انھیں کل نبیوں میں سب سے آخر ہاں مگر رکھ دی سبھی نبیوں پہ سبقت انکی بغض حیدر پہ بھی فردوس کا دعوا ہے جنھیں مثلِ شدّاد ہی ہو سکتی ہے جنّت انکی ہم ہیں عشّاق نبی شہرِ مدینہ سے ہمیں آج بھی ملنے چلی آتی ہے نکہت انکی ہم سے عاصی پہ عنایت سے عیاں ہے شارب ڈھونڈ لیتی ہے گنہگار کو رحمت انکی
  12. کلام عقیدت سید اقبال رضوی شارب صرف قرآں تھام کر جو عمر بھر چلتا رہا جادہِ حق کے سوا ہر اک ڈگر چلتا رہا حُر یہ بولے شکر ہے حتماً ملی راہِ نجات ذہن میں شب بھر مرے زیر و زبر چلتا رہا خوابِ ابراہیم کی تکمیل تھی پیشِِ نظر ذبحِ اعظم یوں سوئے کربل نگر چلتا رہا قاتلانِ شہر بھی کہلائیں گے انسان دوست سلسلہ باطل پرستی کا اگر چلتا رہا ظلم کی ہر انتہا سے صبر کی حد ہے سوا "رک گیا خنجر مگر نیزے پہ سر چلتا رہا" لوٹ کر خیمے سے شہ کے کہہ رہے تھے یہ زہیر * کیا حسیں منزل تھی لیکن میں کدھر چلتا رہا فاصلے ہوتے گئے کم دل سے دل کے درمیاں جادہِ سرور پہ شارب جب بشر چلتا رہا *zuhair ibn e qain As he was reluctant to meet Imam initially, later had shown exemplary courage in defending Imam and his mission.
  13. سلام ( سید اقبال رضوی شارب ) بولوں عبّاس تو خوشبوئے وفا آتی ہے اور افلاک سے رحمت کی گھٹا آتی ہے اس کو دنیا کے غم و یاس سے لینا کیا ہے جسکو غازی کے پھریرے سے شفا آتی ہے جن میں ٹو ٹے ہوئے نیزے کی رقم ہے ہیبت ان ہی اوراق سے تحسینِ وغا آتی ہے دیکھ ظالم نہ ردا چھین سرِ زینب سے اس گھرانے پہ تو جنّت سے عبا آتی ہے ناز کیونکر نہ کرے اس پہ عبادت آخر جس کی زنجیر سے کلمہ کی صدا آتی ہے لکھنے بیٹھو جو غمِ کربو بلا پھر شارب تازگی فکر میں لفظوں میں ضیا آتی ہے
×
×
  • Create New...