Jump to content
Sign in to follow this  
talib e ilm

امام خمینیؒ نویدِ اقبال ہیں

Recommended Posts

 علامہ اقبال نے امام خمینیؒ کی پیدائش سے کئی سال قبل ملّتِ ایران کو امام خمینیؒ کی بشارت دی کہ میں وہ مرد دیکھ رہا ہوں جو تمھاری غلامی کی زنجیروں کو توڑنے آرہا ہے۔۔   

 

اے جوانانِ عجم

 

چوں چراغِ لالہ سوزم در خیابانِ شما
اے جوانانِ عجم جانِ من و جانِ شما
اے جوانانِ عجم! مجھے اپنی اور تمہاری جان کی قسم ہے کہ میں تمہارے چمن میں لالہ کے چراغ کی طرح جل رہا ہوں۔​
غوطہ ہا زد در ضمیرِ زندگی اندیشہ ام
تا بدست آوردہ ام افکارِ پنہانِ شما
میری سوچ نے زندگی کے ضمیر میں بہت غوطے لگائے ہیں، تب کہیں جا کر مجھے تمہارے پوشیدہ افکار کا حصول ہوا ہے۔​
مہر و مہ دیدم نگاہم برتر از پرویں گذشت
ریختم طرحِ حرم در کافرستانِ شما
میں نے سورج اور چاند کا گہرا مشاہدہ کیا، حتیٰ کہ میری نگاہ ستاروں کے جھرمٹ سے بھی آگے نکل گئی۔ (اس گہرے سوچ بچار کے بعد) میں نے تمہارے کافرستان میں حرم کی بنیاد رکھ دی ہے۔​
تا سنانش تیز تر گردد فرو پیچیدمش
شعلہ اے آشفتہ بود اندر بیابانِ شما
تاکہ اُس آشفتہ شعلے کی نوک اور تیز ہو جائے جو تمہارے بیابان میں اب تک آوارہ تھا، میں نے اسے یکجا کر کے لپیٹ لیا ہے۔ (یعنی تمہارے پراکندہ خیالات کو یکجا کر لیا ہے تاکہ اُن کی توانائی اور زیادہ ہو جائے۔)​
فکرِ رنگینم کند نذرِ تہی دستانِ شرق
پارۂ لعلے کہ دارم از بدخشانِ شما
تمہارے بدخشاں سے جو لعل کا ٹکرا میرے پاس ہے اُسے میری رنگین فکر مشرق کے تہی دست لوگوں کو نذر کر رہی ہے۔​
می رسد مردے کہ زنجیرِ غلاماں بشکند
دیدہ ام از روزنِ دیوارِ زندانِ شما
وہ مرد آ رہا ہے (یا آنے والا ہے) جو غلاموں کی زنجیریں توڑ کر اُنہیں آزادی دلائے گا۔ میں نے تمہارے زندان کی دیوار کے روشن دان سے اُسے دیکھا ہے۔​
حلقہ گردِ من زنید اے پیکرانِ آب و گل
آتشے در سینہ دارم از نیاکانِ شما
اے آب و گل کے بنے ہوئے لوگو! آؤ میرے گرد حلقہ بناؤ، میرے سینے میں جو آگ جل رہی ہے وہ میں نے تمہارے ہی اجداد سے لی ہے۔​
 
 
news_12_3_2010_13.jpg
Edited by talib e ilm

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

Sign in to follow this  

  • Recent Posts on ShiaChat!

    • Shakir's translation is not always good I found out recently. Thought let you know
    • Allah سُبْحَانَهُ وَ تَعَالَى himself has cursed different groups in Quran. Eg: Surah Al-Ahzab, Verse 64:
      إِنَّ اللَّهَ لَعَنَ الْكَافِرِينَ وَأَعَدَّ لَهُمْ سَعِيرًا Surely Allah has cursed the unbelievers and has prepared for them a burning fire,
      (English - Shakir)
    • Surah Aal-e-Imran, Verse 7:
      هُوَ الَّذِي أَنزَلَ عَلَيْكَ الْكِتَابَ مِنْهُ آيَاتٌ مُّحْكَمَاتٌ هُنَّ أُمُّ الْكِتَابِ وَأُخَرُ مُتَشَابِهَاتٌ فَأَمَّا الَّذِينَ فِي قُلُوبِهِمْ زَيْغٌ فَيَتَّبِعُونَ مَا تَشَابَهَ مِنْهُ ابْتِغَاءَ الْفِتْنَةِ وَابْتِغَاءَ تَأْوِيلِهِ وَمَا يَعْلَمُ تَأْوِيلَهُ إِلَّا اللَّهُ وَالرَّاسِخُونَ فِي الْعِلْمِ يَقُولُونَ آمَنَّا بِهِ كُلٌّ مِّنْ عِندِ رَبِّنَا وَمَا يَذَّكَّرُ إِلَّا أُولُو الْأَلْبَابِ He it is Who has revealed the Book to you; some of its verses are decisive, they are the basis of the Book, and others are allegorical; then as for those in whose hearts there is perversity they follow the part of it which is allegorical, seeking to mislead and seeking to give it (their own) interpretation. but none knows its interpretation except Allah, and those who are firmly rooted in knowledge say: We believe in it, it is all from our Lord; and none do mind except those having understanding.
      (English - Shakir)
    • I think the verse which says " dont curse" و لا تسبوا is very clear and easy to understand. Shias dont need to insult their enemies because they have enough strong evidence to prove their faith. Insulting is immoral and unIslamic and it is what weak illogical people choose to do.
    • (54:22) We have made the Qur'an easy to derive lessons from. Is there, then, any who will take heed?
×